Forests murree 34

اسسٹنٹ کمشنر مری شاملاتی اراضیوں کے خلاف ایکشن

مری:اسسٹنٹ کمشنر مری شاملاتی اراضیوں کے خلاف ایکشن لینے کے لیئے متحرک۔شاملاتی اراضیوں پر بیٹھے بڑے بڑے مگر مچھوں سے زمین واگزار کروا پائیں گے؟بڑا سوالیہ نشان۔کیا میونسپل کارپوریشن کی فورس کے ساتھ چھوٹی چھوٹی مچھلیاں ہی شکار ہو نگی۔یا بڑی ہاوسنگ سوسائیٹیز سے شاملاتی و جنگلات کی اراضی بھی واگزار کروائی جا سکے گی۔جمعے کے دن اسسٹنٹ کمشنر مری محمد اقبال سنگھیڑا ایک فوج کے ساتھ مری ایکسپریس وے پر حکومتی احکامات کے تحت شاملاتی اراضیوں کو واگزار کروانے کے لیئے نکلے جس پر متعدد مقامات پر لینڈ مافیا کی چیخیں نکل گئیں اسسٹنٹ کمشنر مری محمد اقبال سنگھیڑا حکومتی رٹ قائم کرنے کی لیئے ہمیشہ کوہشاں نظر آتے ہیں مگر ان کے ہی زیر سایہ عملہ مافیا سے ڈیلیں کر کے حکومتی رٹ کو پاؤں کی جوتی کی نوک پر مارتا نظر آتا ہے ماہ رمضان میں اسسٹنٹ کمشنر محمد اقبال سنگھیڑا نے ڈنہ مری میں کئی منزلہ زیر تعمیر عمارت میں مذید لینٹر ڈالنے کے لیئے لگائی جانے والی شیٹرنگ کروائی مگر ان کے زیر سایہ عملہ نے فوراً ڈیل کر کے وہاں پر لینٹر ڈلوا دیا عوام الناس کے مطابق کہیں یہی کچھ شاملاتی اور جنگلات کی اراضی واگزار کروانے کی ان کی حکومتی ویژن کے مطابق کاروائی ان کے زیر سایہ عملہ کی وجہ سے الٹ نہ ہو جاۓ گزشتہ تین سالوں میں ایک اندازے کے مطابق 1250 کنال محکمہ جنگلات کی اراضی پر قبضہ ملکہ کوہسار کے مختلف مقامات پر ہو چکا ہے یاد رہے کہ حکومت اور سپریم کورٹ نے پورے کوہسار کو نیشنل پارک ڈیکلئیر کر کے شاملاتی زمین کے انتقالات اور اس کی حثیت تبدیل کرنے تعمیرات کرنے پہاڑوں کی کٹائی کرنے پر پابندی عائد کر رکھی ہے مگر ایکسپریس وۓ پر ڈریم ویلی ہاوسنگ والے بااثر مافیا نے اس حوالے سے تمام اقدامات ہوا میں اڑاتے ہوۓ پہاڑ کاٹ کاٹ کر نالہ کورنگ کا پانی بھی الودہ کر رکھا ہے جو شہر اقتدار اسلامآباد اور راولپنڈی کے باسی عرصہ سے استعمال کر رہے ہیں ۔۔۔