Major General Babar Iftikhar 27

کسی الائونس کے بغیرکورونا سے نمٹنے میں مدد کرینگے:میجر جنرل بابرافتخار

ترجمان پاک فوج میجر جنرل بابرافتخار نے کہا ہے کہ صحت عامہ کےتحفظ کیلیےملک بھر ‏میں پاک فوج کو سول اداروں کی معاونت کیلیےطلب کیاگیاہے۔اس حوالے سے پاک فوج نےکسی بھی قسم ‏کا انٹرنل سیکیورٹی الائونس کلیم نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔عالمی وبا کورونا وائرس کے بڑھتے خطرات کے پیش نظر ملک کےسولہ متاثرہ شہروں میں فوج کو تعینات کردیا گیا ہے۔گھروں۔مساجد اور تمام مقامات پر حفاظتی تدابیر پر عمل کرکے ہم ایک دوسرے کی مدد کرسکتے ہیں۔

پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل بابر افتخارنے میڈیا بریفنگ میں کہاکہ پاکستان میں کورونا کے 90 ہزار کیسز موجود ہیں، ملک کے 51 شہروں میں کورونا مثبت کیسز کی شرح 5فیصد سے زیادہ ہے۔ملک کے 16 شہروں میں کورونا کیسز کی شرح بہت زیادہ ہے جہاں پاک فوج تعینات ہے۔جبکہ تمام اضلاع میں انتظامیہ کی مدد کیلئے۔پاک فوج کی ٹیمز پہنچ گئی ہیں۔پاک فوج تمام ترصلاحیتوں کو بروئے کارلاتےہوئےہرممکن اقدام کرے گی۔آرٹیکل245 کے تحت ملک بھر میں ہر ایڈمنسٹریٹوڈویژن کی سطح پر ایک ٹیم تعینات کر دی گئی ہے۔پاک فوج کے دستوں کی تعیناتی کا بنیادی مقصد سول حکومت کی معاونت ہے۔

صورتحال ابترہوئی تو صنعتوں کےلیے مختص آکسیجن اسپتالوں کودینا پڑے گی

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہاکہ عوام کا اعتماد افواج پاکستان کا اثاثہ ہے اور پاک فوج آزمائش کی گھڑی میں تمام تر صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے عوام کی صحت اور حفاظت کیلئے ہر ممکن اقدامات کرے گی۔پاک فوج نے اس بار بھی انٹرنل سیکیورٹی الاؤنس نہ لینے کا فیصلہ کیا ہے۔تمام صوبائی ایپکس کمیٹیوں کی میٹنگز ہفتے میں ایک دن ہوں گی۔سول اداروں کی معاونت کےلیے پاک فوج تیار ہے۔پاکستان میں مثبت کیسز کی شرح خطرناک حد تک بڑھ چکی ہے۔کورونا سے اموات میں تیزی سے اضافہ ہورہے۔اس وقت ہیلتھ کیئر سیکٹر کا شعبہ شدید دبائو میں ہے۔ملک میں آکسیجن کی کل پیداوار75 فیصد صحت کے شعبے کے لیے مختص ہے۔ملک بھر میں 570افراد وینٹی لیٹر پر ہیں۔کورونا کی صورتحال ابتر ہوئی تو انڈسٹری کےلیے مختص آکسیجن اسپتالوں کو دینا پڑےگی۔