Inclusive lands 64

عجب کرپشن غضب کہانی

عجب کرپشن غضب کہانی
ملکہ کوہسار مری میں سپریم کورٹ اور حکومت پنجاب کی طرف سے شاملاتی اراضی پر عائد پابندیوں کو پٹواری بادشاہ نے لینڈ مافیا کی تجوریوں کے منہ کھلتے ہی ہوا میں اڑاتے ہوۓ سینکڑوں کنال اراضی ڈریم ویلی ہاوسنگ سوسائٹی کے نام انتقال کر ڈالے۔سابق اسسٹنٹ کمشنر مری کے احکامات بھی محکمہ مال اور مری پولیس نے مال بناؤ پالیسی پر گامزن رہتے ہوۓ خاطر میں نہ لاۓ
ڈریم ویلی ہاوسنگ سوسائٹی کی انتظامیہ پہاڑوں کی کٹائی میں مصروف
۔پہاڑوں کی کٹائی سے نالہ کورنگ کا پانی بھی آلودہ ہونے لگا۔ماضی میں ماحولیاتی آلودگی سے بچنے کے لیئے مری کہوٹہ کوٹلی ستیاں کو نیشنل پارک ڈیکلیئر کرتے ہوۓ شاملاتی زمینوں کے انتقالات پر پابندی عائد کی تھی۔مگر مری میں لینڈ مافیا نے مری ایکسپریس وے پر اس پابندی کو جوتی کی نوک پر دے مارا۔سابق اسسٹنٹ کمشنر نے انچارچ پولیس چوکی تریٹ کو استغاثہ دینے کے احکامات جاری کیے تھے جن پر عملدرآمد نہ ہو سکا
متعلقہ پٹواری بادشاہ کو ماضی کی حکومتوں اور حلقہ کی منتخب قیادت کی اس دور میں بھی مکمل آشیرباد حاصل ہے