Graduate EngineersGraduate Engineers 13

انسٹی ٹیوٹ آف انجینئرزپاکستان کی طرف سے گریجویٹ انجینئرز کے لیے تکنیکی لیکچر کا اہتمام

اسلام آباد: انسٹی ٹیوٹ آف انجینئرز پاکستان (راولپنڈی، اسلام آباد سنٹر)نے پروجیکٹ مینجمنٹ میں امور کو اجاگر کرنے کیلئے گریجویٹ انجینئرز کے لئے تعمیراتی دعوے کے عنوان سے تکنیکی لیکچر کا اہتمام کیا۔اس کا مقصد نوجوان انجینئرز کو ان کی انتظامی ذمہ داریوں اور مختلف دعووں اور تنازعات کو طے کرنے میں قانونی ذمہ داریوں سے آگاہ کرنا تھا۔اس پروگرام کا اہتمام سنٹر نے اپنے مسلسل پیشہ ورانہ ترقیاتی پروگرام(سی پی ڈی) کے سلسلے میں نوجوان انجینئرز کے لئے کیا تھا۔اس پروگرام میں معروف پروجیکٹ مینجمنٹ پروفیشنل انجینئر ہارون رشید مہمانخصوصیتھے جنہوں نے تعمیراتی کام میں دعووں اور تنازعات کے موثر انتظام کی اہمیت پر زور دیا۔انجینئر پروفیسر ڈاکٹر عطا اللہ شاہ ، وائس چانسلر قراقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی ، گلگت بلتستان نے دعوے طے کرنے اورسول اورپبلک سیکٹر کے منصوبوں پر عمل پیرا ہونے میں معاہدوں کی شفافیت کو یقینی بنانے کے بارے میں تفصیلی گفتگو کی۔سی پی ڈی کے کنوینرانجینئر احمد شمیم نے اس سیشن کا انعقاد کیاتھا اور اس موقع پر چیئرمین آئی ای پی۔آرآئی سی حافظ ایم احسان الحق قاضی اور سیکرٹری آئی ای پی۔آرآئی سی انجینئر نجم الدین بھی موجود تھے ۔انجینئر ہارون رشید نے شرکاء کو مشترکہ دعووں کے بارے میں واضح کیا جن کا پروجیکٹ انجینئرز کو تعمیراتی عمل میں سامنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان دعووں کو ایف آئی ڈی آئی سی 87 کے تحت طے کرنے کی ضرورت ہے جو منصوبوں کو انجام دینے کے بین الاقوامی اصولوں اور طریقوں پر مشتمل ہے۔اس موقع پر ڈاکٹر عطا اللہ شاہ نے کہاکہ نوجوان انجینئرز کو پروجیکٹ مینجمنٹ میں اپنی صلاحیتوں کو بڑھانے پر توجہ دینی ہوگی اور انھیں کسی بھی پروجیکٹ کے مانیٹرنگ سسٹم کو مضبوط بنانا ہوگا۔انجینئرحافظ احسان الحق قاضی نے اپنے اختتامی کلمات میں ریسورس پرسن اور ڈاکٹر عطا اللہ کا ان کی مفیدگفتگو پر شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے شرکا کو آگاہ کیا کہ سرٹیفیکیشن کورسز شروع کرنے کے لئے کوششیں جاری ہیں اور آئی ای پی آر آئی سی انجینئرز کیلئے مستقل صلاحیت میں اضافے کی تربیت جاری رکھے گی۔