Shahbaz Sharif 16

ضمانت مسترد، شہباز شریف کو عدالت سے گرفتار کر لیا گیا

لاہور ہائیکورٹ نے قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہبازشریف کی عبوری ضمانت خارج کردی جس کے بعد انہیں گرفتار کرلیا گیا۔نجی ٹی وی جیو کی رپورٹ کے مطابق لاہور ہائیکورٹ کے دو رکنی بینچ نے آمدن سے زائد اثاثے اور منی لانڈرنگ کے کیس میں شہبازشریف کی عبوری ضمانت کی درخواست پر سماعت کی جس سلسلے میں اپوزیشن لیڈر کے وکیل اعظم نذیر نے دلائل دیے اور اس موقع پر نیب کی ٹیم بھی کمرہ عدالت میں موجود تھی۔شہبازشریف کے وکیل نے اپنے دلائل میں کہا کہ تمام آمدن پر ٹیکس ادا کیا اور ان کا آڈٹ بھی کروایا، نیب 20 سال بعد نیب ٹیکس ریٹرن کو نہیں مان رہا، 26 کروڑ روپے کا فرق نیب نکال نہیں سکتا اس لیےآمدن نہیں مانتا۔ شہباز شریف 1990ء میں 2 اعشاریہ 212 ملین روپے تھے، نیب پراسکیوٹر

2018ء میں شہباز شریف کے اثاثے 7 اعشاریہ 32 بلین روپے تک پہنچ گئے، سید فیصل رضا بخاری نیب پراسکیوٹر

376 اعشاریہ 22 ملین، 11 صنعتی یونٹس، 4 بے نامی کمپنیاں شہباز شریف نے بنائیں، سید فیصل رضا بخاری

عدالت کے سامنے گواہان کے بیانات رکھوں گا جو کبھی ملک سے باہر نہیں گے، نیب وکیل

مگر ان کے نام سے ٹی ٹی منگوائی گئیں

مشتاقِ چینی کا کہنا تھا کہ 60 کروڑ روپے بلیک سے سفید کروانا ہے، نیب وکیل

وزیراعظم کے بھتیجے اور وزیراعلیٰ کے بیٹے کو انکار نہیں کر سکتا تھا

ٹی ٹی کے زریعے 50 کروڑ روپے میرے اکاؤنٹ میں اے جو سلمان شہباز کو منتقل کیے، نیب وکیل

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں