CCPO Lahore 15

سی سی پی او لاہور کی اشتہاری قبضہ گروپ ملزمان کی گرفتاری

سی سی پی او لاہور محمد عمر شیخ کی زیر صدارت قبضہ گروپوں کو آڑے ہاتھوں لینے کیلئے اعلیٰ سطحی میٹنگ ہوئی، میٹنگ میں ڈی آئی جی آپریشنز اشفاق احمد خان، ایس ایس پی آپریشنز فیصل شہزاد، ایس پی سٹی تصور اقبال سمیت تمام ڈویژنل افسران نے شرکت کی، میٹنگ میں اگست 2018 سے اگست 2020 تک کے قبضہ گروپوں کا ریکارڈ پیش کا گیا، اجلاس میں اشتہاری قبضہ گروپ ملزمان کی گرفتاری کیلئے مختلف تجاویز اور طریقہ کار کو زیر بحث لایا گیا، جبکہ اشتہاری قبضہ گروپوں کے ریکارڈ اور مقدمات کا تفصیلی جائزہ بھی لیا گیا، لاہور پولیس نے سابقہ ریکارڈ یافتہ ملزمان کے خلاف بڑے پیمانے پر آپریشن کی تیاریاں مکمل کر لیں گئیں، اس حوالے سے سی سی پی او لاہور عمر شیخ نے اشتہاری قبضہ گروپ ملزمان کی گرفتاری کیلئے تمام ڈویژنل افسران کو 31 اکتوبر تک کی مہلت دی، سی سی پی او لاہور نے قضبہ گروپوں کےخلاف روزانہ کی بنیاد پر فالواپ میٹنگ کی بھی ہدایت کی، ان کا مزید کہنا تھا کہ اشتہاری قبضہ گروپ کےخلاف کریک ڈاؤن کےلئے اصل ٹیم آپریشن ونگ ہے، قبضہ گروپ معاشرتی ناسور ہیں، جنہیں ہر صورت ختم کیا جائے گا، میٹنگ میں ایس ایس پی آپریشنز لاہور فیصل شہزاد کا کہنا تھا کہ اشتہاری ملزمان اور عدالتی مفروروں کی گرفتاری کیلئے 172 ٹیمیں کام کررہی ہیں، کیٹگری اے، بی اور سی کے ملزمان کو گرفتاری کو یقینی بنایا جارہا ہے، افسران سے مخاطب ہوتے ہوئے سی سی پی او لاہور نے سمارٹ لاہور پولیس ویژن 2021 بھی پیش کیا جس کے مطابق شہر لاہور کی پولیس کو یکم جنوری 2021 تک نیویارک پولیس کی طرز پر ڈھالنا ہے،

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں