Prime Minister Citizen Portal 9

چند ریلوے افسران سنجیدہ لینے کو تیار نہیں

وزیر اعظم سٹیزن پورٹل کی شکایات کو چند ریلوے افسران سنجیدہ لینے کو تیار نہیں

وزیراعظم سٹیزن پورٹل پر عوامی شکایات پر شکایت کنندہ کو مطمئن کرنے کیلئے جواب تو دیا جاتا ہے لیکن عملی کام اسکے برعکس ہے. اے آئی او ڈبلیو 2 راولپنڈی نے سٹیزن پورٹل پر شہری کیجانب سے کی گئی شکایت پر کاروائی کی اور فیلڈ اسٹاف سے انکوائری کروائی سرکاری مکان 436 بلاک نمبر 6 سی ڈی ایل کالونی راولپنڈی میں کرائے پر ہونے کی وجہ سے مکمل انکوائری کے بعد 08.06.2020 کو سینئر افسران کو جواب لکھ کردیا کہ سرکاری مکان کرائے پر تھا اس لیے اسکو کینسل کیا جائے تاہم بعد میںAENراولپنڈی ڈویژن اشرف نے مالک مکان سے ساز باز کرکے کواٹر کینسل کرنے کی بجائے سٹیزن پورٹل پر17.06.2020کو شکایت کنندہ کو جھوٹی تسلی دی کہ آپکی شکایت درست ثابت ہوئی سرکاری مکان غیر قانونی طور پر پرائیویٹ لوگوں کو کراۓ پر دیا گیا تھا اس لیے یہ کواٹر کینسل کردیا گیا ہے لیکن بعدازاں ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ اس افسر نے یہ کواٹر کینسل کرنے کی بجائے اسکا کینسل نوٹس ہی نہیں نکالا تھا جبکہ سٹیزن پورٹل پر شہری کو ڈیڑھ ماہ پہلے جواب دیا گیا کہ یہ کواٹر کینسل کیا جاچکا ہے اور یوں اس افسر کی ملی بھگت نے وزیراعظم سٹیزن پورٹل، سینئر افسران اور شکایت کنندہ کو بیوقوف بنایا.
اے ای این راولپنڈی کی طرف سے کینسل نوٹس نہ نکالنے کا مقصد سابقہ مالک مکان کو کواٹر کا قبضہ واپس لینے کیلئے ٹائم دینا تھا تانکہ وہ غیر قانونی طریقے سے پھر سے کینسل شدہ کواٹر پر قبضہ کرکے دوبارہ یہ کواٹر اپنے یا اپنے بھائیوں کے نام آلاٹ کرواسکے. ڈیڑھ ماہ جب کواٹر کا کینسل نوٹس نہیں نکلا تو اس دوران اے ای این کی ملی بھگت سے رب نواز خان نے کینسل شدہ کواٹر پر قبضہ کرلیا ہے جبکہ اے ای این آفس قبضہ چھڑوانے میں بری طرح ناکام ہے اے ای این اشرف جو کہ گزشتہ 20 سال سےزائد عرصے سے راولپنڈی ڈویزن میں تعینات ہیں متعدد دفعہ اے ای این اشرف کی ٹرانسفر ہوئ لیکن اپنے اثر ورسوخ کو استعمال کرتے ہوئے وہ اپنی ٹرانسفر رکوانےمیں ہر دفعہ پوری طرح کامیاب ہوئے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں