ہزارہ ڈویژن میں ڈینگی کی وباء عروج پر ہے۔

ہری پور/ایبٹ آباد:

ڈینگی پورے ہزارہ ڈویژن میں پھیل چکا ہے، درجنوں افراد علاقے کے مختلف اسپتالوں میں داخل ہیں۔

ہری پور کے ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر (ڈی ایچ او) ڈاکٹر منور خان آفریدی نے ضلع ہری پور کے علاقے حلابت چھوہار کالونی کے سیکٹر 2 میں ڈینگی وائرس کے کیسز سامنے آنے کے بعد حلابت ٹاؤن میں سپرے کرنے کا حکم دیا ہے۔

چھوہڑ کالونی میں ڈینگی وائرس سے بچاؤ کے لیے سپرے مہم مکمل کر لی گئی۔

محکمہ صحت نے جی ٹی روڈ، رنگ روڈ اور اندرون شہر سمیت ہری پور کے متعدد علاقوں میں بھی دھوئیں کا کام شروع کر دیا ہے۔ محکمہ نے ڈینگی بخار کے خلاف احتیاطی تدابیر کے حوالے سے ہدایات بھی جاری کی ہیں۔

ضلع مانسہرہ میں ڈینگی کی صورتحال تشویشناک ہے کیونکہ پھگلہ گاؤں کی پانچ خواتین سمیت 20 سے زائد مریض اس وائرس کا شکار ہو کر کنگ عبداللہ ہسپتال مانسہرہ میں داخل ہیں۔ ڈینگی کے مریضوں کے علاج کے لیے صحت انصاف کارڈ دستیاب ہے۔

ضلع مانسہرہ گزشتہ چند سالوں میں ڈینگی سے سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے جہاں تقریباً ہر یونین کونسل سے سینکڑوں مریض رجسٹرڈ ہو چکے ہیں۔ لوگوں نے مانسہرہ کی ضلعی انتظامیہ اور محکمہ صحت سے شکایت کی ہے کہ متاثرہ علاقوں میں بیماری پھیلنے کے باوجود دوا کا صرف ایک یا دو بار سپرے کیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ محکمہ صحت نے اگست تک انکیوبیشن کی مدت کے دوران لاروا کو ختم کرنے کے لیے کچھ نہیں کیا اور اب ڈینگی دوبارہ واپس آ رہا ہے۔

ایبٹ آباد میں ڈینگی کے کیسز بنیادی طور پر شیروان سرکل سے رپورٹ ہوئے، تحصیل حویلیاں سے 4-5 کیسز رپورٹ ہوئے۔

دریں اثناء ایبٹ آباد واٹر اینڈ سیوریج سروسز کمپنی (WSSCA) کے چیئرمین بورڈ آف ڈائریکٹرز میجر ذوالفقار احمد نے یونین کونسل سٹی، کیہال، نواں شہر اور ڈمپ سائٹ کا دورہ کیا۔

دورے کے دوران انہوں نے فوارہ چوک، کنج روڈ، لنک روڈ، مری روڈ، جھاڑیاں روڈ اور عوامی روڈ پر صفائی کے انتظامات کا جائزہ لیا۔

ڈبلیو ایس ایس سی اے کے چیئرمین نے کھلے ہیچز کو بند کرنے، نالیوں سے فضلہ ہٹانے اور فضلہ کو بروقت ٹھکانے لگانے کی ہدایات جاری کیں۔ انہوں نے علاقہ مکینوں سے ملاقات کی اور ان کی شکایات دور کرنے کی ہدایات دیں۔ بند کھو چوک کے تاجروں اور سبزی فروشوں کو مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ کچرا نالوں میں نہ پھینکیں اور ڈبلیو ایس ایس سی اے حکام سے تعاون کریں۔

سالڈ ویسٹ مینجمنٹ کے ڈپٹی منیجر انجینئر جاوید عباسی نے میجر (دائیں) ذوالفقار احمد کو لینڈ فل کے ایک حصے میں کچرے کو سائنسی طریقے سے ٹھکانے لگانے کی منصوبہ بندی سے آگاہ کیا۔ عمر اصغر خان فاؤنڈیشن کے کوآرڈینیٹر ممتاز تنولی اور چیف سینی ٹیشن انسپکٹر محمد ثاقب بھی موجود تھے۔

24 اگست کو ایکسپریس ٹریبیون میں شائع ہوا۔ویں2022۔


ِ
#ہزارہ #ڈویژن #میں #ڈینگی #کی #وباء #عروج #پر #ہے

(شہ سرخی کے علاوہ، اس کہانی کو مری نیوز کے عملے نے ایڈٹ نہیں کیا ہے اور یہ خبر ایک فیڈ سے شائع کیا گیا ہے۔)

جواب دیں