"پاکستان کے لیے سینما اور ڈرامے کی بحالی ضروری ہے”

اسلام آباد:

وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے پیر کو کہا کہ سینما اور ڈرامہ پاکستان کا عالمی امیج بہتر بنانے میں اہم کردار ادا کر سکتے ہیں۔

چیئرمین پاکستان فلم پروڈیوسرز ایسوسی ایشن شیخ امجد رشید کی قیادت میں ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ فلموں کی تاریخ، معیار اور ٹیکنالوجی کو بہتر بنانا حکومت کی اعلان کردہ قومی فلم پالیسی کا حصہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت سینما گھروں کی مرمت، نئے سینما گھر بنانے اور فنکاروں کی حوصلہ افزائی کے لیے عملی اقدامات کر رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت معیاری فلموں کی بہت ضرورت ہے اور فلم انڈسٹری ٹیکنالوجی اور جدید تقاضوں کے مطابق چل رہی ہے۔

انہوں نے وفد کو بتایا کہ اس سلسلے میں فلم سازوں کو فلم انڈسٹری کے لیے آلات کی درآمد کے لیے ٹیکس مراعات سمیت ریاست کی طرف سے ہمہ جہت تعاون حاصل ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ فلم انڈسٹری کے لیے ٹیکس ود ہولڈنگ ختم کرنے کے لیے فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) سے بات چیت جاری ہے، جلد ایکشن پلان طے کیا جائے گا۔

مریم نواز نے کہا کہ نئے سینما گھروں، پروڈکشن ہاؤسز کو ٹیکس مراعات دینے کے لیے متعلقہ حکام سے بات چیت جاری ہے اور جلد ہی فلم انڈسٹری کے تمام اسٹیک ہولڈرز سے ٹیکس مراعات اور دیگر امور پر مشاورت کی جائے گی۔

حکومت نے ذمہ داری سنبھالتے ہی فلم اینڈ کلچر پالیسی کو بحال کیا اور فلم کو انڈسٹری کا درجہ دیا۔

ان کے مطابق پاکستانی اور چینی فلم سازوں کی مشترکہ پروڈکشن کے قیام کی کوششوں کو تقویت ملے گی۔

وزیر نے وفد کو پاک چین تعاون اور فلم پروڈکشن میں تعاون پر چینی سفیر کے ساتھ ہونے والی بات چیت سے بھی آگاہ کیا۔

فلم پروڈیوسرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین شیخ امجد رشید نے کہا کہ حکومتی اقدامات سے فلم اور فلم انڈسٹری کی بحالی میں مدد ملے گی اور ان کی ایسوسی ایشن پاکستانی فلم انڈسٹری کو اس کی حقیقی شناخت دلانے کے لیے حکومت کے ساتھ مل کر کام کرے گی۔

23 اگست کو ایکسپریس ٹریبیون میں شائع ہوا۔rd2022۔


ِ
#پاکستان #کے #لیے #سینما #اور #ڈرامے #کی #بحالی #ضروری #ہے

(شہ سرخی کے علاوہ، اس کہانی کو مری نیوز کے عملے نے ایڈٹ نہیں کیا ہے اور یہ خبر ایک فیڈ سے شائع کیا گیا ہے۔)

جواب دیں