ٹوکیو اولمپکس ایگزیکٹ رشوت لینے کے الزام میں گرفتار

ٹوکیو:

ٹوکیو اولمپکس کے بورڈ کے ایک رکن کو بدھ کو رشوت لینے کے شبے میں گرفتار کیا گیا، استغاثہ نے کہا کہ اس اسکینڈل سے منسلک تین دیگر افراد کے ساتھ۔

ہاریوکی تاکاہاشی نے مبینہ طور پر ہائی سٹریٹ بزنس سوٹ خوردہ فروش آوکی ہولڈنگز سے $380,000 وصول کیے، جو گزشتہ سال کے وبائی امراض میں تاخیر کا شکار 2020 گیمز کا آفیشل پارٹنر تھا۔

اے ایف پی کی طرف سے دیکھے گئے ٹوکیو پراسیکیوٹرز آفس کی دستاویزات کے مطابق، 78 سالہ بوڑھے کو آوکی کے چیئرمین ہیرونوری آوکی، 83، اور خوردہ فروش کے دو دیگر ایگزیکٹوز کے ساتھ گرفتار کیا گیا تھا۔

وہ تاکاہاشی پر رشوت لینے کا الزام لگاتے ہیں "اس سمجھ کے ساتھ کہ ان کا مطلب فائدہ مند اور ترجیحی سلوک کے لئے شکریہ کی رقم کے طور پر تھا” اس نے آوکی کو عطا کیا۔

استغاثہ کے مطابق، تاکاہاشی نے اکتوبر 2017 سے مارچ 2022 کے درمیان 50 سے زیادہ ٹرانزیکشنز میں کل 51 ملین ین ($ 380,000 آج کے نرخوں پر) اپنی ایک کمپنی کے بینک اکاؤنٹ میں منتقل کیے تھے۔

جاپانی میڈیا کے مطابق گزشتہ ماہ تاکاہاشی کے ٹوکیو کے گھر پر تفتیش کاروں کے چھاپے کے بعد یہ گرفتاریاں عمل میں آئیں، آوکی چیئرمین کے گھر اور ٹوکیو 2020 کی آرگنائزنگ کمیٹی کے دفتر میں بھی تلاشی لی گئی۔

تاکاہاشی، جاپان کی سب سے بڑی ایڈورٹائزنگ ایجنسی ڈینٹسو کے ایک سابق ایگزیکٹو نے جون 2014 سے ٹوکیو 2020 بورڈ میں خدمات انجام دیں۔

اس دوران اسے مبینہ طور پر ایک نیم سرکاری ملازم سمجھا جاتا تھا جسے اپنے عہدے سے متعلق رقم یا تحائف قبول کرنے کی اجازت نہیں تھی۔

ٹوکیو 2020 کی آرگنائزنگ کمیٹی نے گزشتہ ماہ آپریشنز کو ختم کر دیا، لیکن اس نے اثاثوں اور واجبات سے نمٹنے کے لیے اپنی موجودگی برقرار رکھی ہے۔

ٹوکیو اولمپکس 2021 میں کوویڈ 19 وبائی امراض کی وجہ سے ایک سال کی غیر معمولی تاخیر کے بعد منعقد ہوئے۔ جاپان میں بڑھتے ہوئے وائرس کے انفیکشن کی وجہ سے شائقین پر پابندی کے ساتھ اسٹیڈیم بڑے پیمانے پر خالی تھے۔


ِ
#ٹوکیو #اولمپکس #ایگزیکٹ #رشوت #لینے #کے #الزام #میں #گرفتار

اس خبر کو درجہ ذیل لنک سے حاصل کیا گیا ہے
(https://tribune.com.pk/story/2371637/tokyo-olympics-exec-arrested-over-bribery-allegations)

جواب دیں