آنکھوں کے انفیکشن میں اضافہ

راولپنڈی:

مون سون کا موسم پرکشش اور خوشنما ہو سکتا ہے، لیکن یہ آنکھوں کے انفیکشن سمیت صحت کے مسائل کی کثرت بھی لاتا ہے۔ بارش کا موسم بڑی تعداد میں لوگوں کو آنکھوں میں انفیکشن کا شکار بناتا ہے کیونکہ ہوا میں نمی کی مقدار بیکٹیریا، وائرس اور دیگر جراثیم کے بڑھنے اور بڑھنے کے لیے سازگار حالت پیدا کرتی ہے۔

مون سون کی بارشوں کا سلسلہ بدستور جاری ہے، آنکھوں کے انفیکشن، الرجی اور آشوب چشم میں مبتلا خواتین اور بچوں سمیت لوگوں کی بڑی تعداد نے گیریژن سٹی کے ہسپتالوں کے لیے قطاریں بنانا شروع کر دی ہیں۔

ماہرین امراض چشم کا کہنا ہے کہ بارش کے ان دنوں میں الرجی اور آنکھوں میں انفیکشن ایک عام سی بات ہے کیونکہ ان کے مطابق ہوا میں بیکٹیریا اور وائرس بھر جاتے ہیں۔ ڈاکٹروں نے شہریوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ موجودہ موسمی حالات میں اس بیماری سے بچنے کے لیے احتیاطی تدابیر اختیار کریں۔

ماہر امراض چشم ڈاکٹر طاہر فاروق کے مطابق آشوب چشم ایک آنکھ کا انفیکشن ہے جو ایک شخص سے دوسرے میں تیزی سے پھیلتا ہے۔ "عام طور پر، یہ انفیکشن گرمیوں یا برسات کے موسم میں زور پکڑتا ہے۔ نم موسمی حالات میں، آشوب چشم بہت تیزی سے پھیلتا ہے لیکن احتیاطی تدابیر اختیار کر کے اس سے بچا جا سکتا ہے،” انہوں نے کہا۔

انہوں نے کہا کہ لوگوں کو بار بار ہاتھ دھونے چاہئیں اور آنکھوں کے انفیکشن سے بچنے کے لیے ہاتھ سے آنکھ ملانے سے گریز کرنا چاہیے۔

ڈاکٹر نے کہا کہ لوگوں کو اپنی آنکھوں کو انگلیوں سے رگڑنے سے گریز کرنا چاہیے کیونکہ ان میں جراثیم ہوتے ہیں اور یہ انفیکشن کا باعث بن سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لوگ تولیے، نیپکن وغیرہ کا اشتراک نہ کریں کیونکہ ایسا کرنے سے آنکھوں میں انفیکشن ہونے کا خطرہ بڑھ سکتا ہے۔

آشوب چشم میں مبتلا ایک مریض نوید شمس نے بتایا کہ اس کے گھر کے 11 میں سے سات افراد آشوب چشم کا شکار ہو چکے ہیں۔

اس مرض میں مبتلا مریضوں کو اپنی آنکھوں میں شدید جلن محسوس ہوتی ہے اور دھوپ میں آنکھیں کھولنا بہت مشکل ہوجاتا ہے۔ مریض کی آنکھیں سرخ ہو جاتی ہیں اور آنکھوں سے پانی بہنے لگتا ہے۔ میں پچھلے تین دنوں سے ڈاکٹر کے پاس جا رہا ہوں، لیکن مجھے کسی قسم کی راحت نہیں ملی،” انہوں نے مزید کہا کہ وہ ڈاکٹر کی طرف سے بتائی گئی احتیاطی تدابیر پر عمل کر رہے ہیں تاکہ ان کے گھر کے دیگر افراد اس بیماری میں مبتلا نہ ہوں۔

راولپنڈی کے تین الائیڈ ہسپتالوں سے حاصل کردہ اعداد و شمار کے مطابق عام دنوں کی نسبت برسات کے موسم میں آشوب چشم کے مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔

تینوں الائیڈ ہسپتالوں کے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران آشوب چشم میں مبتلا مزید 12 مریض ہسپتالوں میں آئے ہیں۔

امراض چشم کے ماہر ڈاکٹر مدثر نے بتایا کہ بارش کے بعد گردو غبار اٹھنے سے بھی آشوب چشم ہو سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آلودہ ہوا اور تیز روشنی کے آلات کا زیادہ استعمال بھی اس بیماری کی وجہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ آشوب چشم کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے شہریوں کو ذمہ داری کا مظاہرہ کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ مریض کی آنکھوں سے خارج ہونے والا پانی زہریلا ہوتا ہے اور جب مریض اسے اپنے ہاتھوں سے صاف کرتا ہے تو اس میں انفیکشن ہو جاتا ہے اور مصافحہ کرنے سے یہ مرض دوسرے لوگوں میں بھی منتقل ہو سکتا ہے۔

ایکسپریس ٹریبیون میں 18 اگست کو شائع ہوا۔ویں، 2022۔


ِ
#آنکھوں #کے #انفیکشن #میں #اضافہ

اس خبر کو درجہ ذیل لنک سے حاصل کیا گیا ہے
(https://tribune.com.pk/story/2371697/rainy-season-eye-infections-on-the-rise)

جواب دیں